Monday , December 18 2017
Home / Islamic / Itikaf ki Fazilat in Urdu

Itikaf ki Fazilat in Urdu

Itikaf ki Fazilat in Urdu

Itikaf is a form of worship. It is formed by staying in a Mosque for Last Ten days in Ramzan.

Nawafil Of Itikaf In Urdu

Itikaf ki dua:

Itikaaf 20 Rumdhan ko Ghroob-a-aftaab say phely Niyat kur kay ap apny ghur meah apny room meah bath sukti hen, or day and night Allah ki humd -o- Sunaa kurin.

Itikaf Mein Ibabat In Urdu

Itikaf ki ibadat in urdu:

Gossul kur kay pak saf ho jayiin acha dress zab-a-tun kurin or Dil meay niyat kurin yaa zoban say adaa kurin dono theek hen kay, Aay Allah meah Rumzan kay last ten days kay sonnat Itakaf ki Niyat kurta hon ya kurti hon.

itikaf ki fazilat

Itakaf ka main muqsad lala-tul -Quddur ko Taaq rato meah tulash kurna or ziyada say ziyada Allah ki ebadat kurna hota hay, during Itakaf ap ziyada say ziyada Quran ki tulawat kurin, Nuwafil or zikur uzkar kurin, or doniyaa say kut kay Allah ki ebadat kurin,

Itikaf rules for femalesitikaf rules in urdu

itikaf rules in urduاعتکاف کے مسائل:
اعتکاف میں بےضرورت(بالخصوص فضول اور لغو) بات کرنے سے احتراز کیا جائے، یاد رکھیں اعتکاف میں بےضرورت اعتکاف کی جگہ سے نکلنا جائز نہیں، ورنہ اعتکاف باقی نہیں رہے گا، اس حوالہ سے یہ بات ذہن میں رکھیں کہ اعتکاف کی جگہ سے مراد وہ پوری مسجد ہے جس میں اعتکاف کیا جائے۔
یاد رکھیں اگر کوئی بھول کر بھی اپنی اعتکاف کی مسجد سے نکل گیا تب بھی اعتکاف ٹوٹ جائے گا۔
(فتح القدیر، جلد 2، صفحہ 110)
عورت اپنے گھر میں ایک جگہ نماز کے لئے مقرر کر کے وہاں اعتکاف کرے، اس کو مسجد میں اعتکاف بیٹھنے کا ثواب ملے گا۔
(فتاوٰی عالمگیری، جلد 1، صفحہ 211)
نبی علیہ السلام نے عورتوں کا مسجد میں اعتکاف کرنے کو پسند نہیں فرمایا اس لئے عورتیں اعتکاف کے لئے گھر میں بیٹھتی ہیں،
مفہوم حدیث:
نبی علیہ السلام نے اعتکاف کا ارادہ کیا، جب آپ اس جگہ آئے جہاں اعتکاف کرنا چاہتے تھے تو آپ نے وہاں کئی خیمے لگے ہوئے دیکھے، 1 خیمہ عائشہ رضی اللہ عنھا کا، 1 حفصہ رضی اللہ عنھا کا اور 1 زینب رضی اللہ عنھا کا دیکھا،
تو آپ علیہ السلام نے پوچھا یہ خیمے کن کے ہیں؟
لوگوں نے کہا کہ عائشہ، حفصہ اور زینب (رضی اللہ عنھا) کے ہیں، نبی علیہ السلام نے فرمایا کیا تم ان عورتوں کے ساتھ نیکی کا گمان کرتے ہو، پھر آپ واپس آگئے اور اعتکاف نہ کیا اور پھر شوال کے دنوں میں اعتکاف کیا۔
(موطا امام مالک، حدیث 642، درجہ: صحیح، کتاب الاعتکاف، باب: اعتکاف کی قضاء کا بیان، راوی: عائشہ رضی اللہ عنھا)
پیشاب، پاخانہ اور غسل جنابت کے لئے باہر جانا جائز ہے، اسی طرح اگر گھر سے کھانا لانے والا کوئی نہ ہو تو کھانا کھانے کے لئے گھر جانا بھی جائز ہے۔
دوران اعتکاف عورتوں کے مخصوص ایام شروع ہوجائیں تو اعتکاف ختم ہوجاتا ہے، باہر نکل آئے۔

document.write(unescape());